ڈینگی سرویلینس کو روزانہ کی بنیاد پر یقینی بنایا جائے،ڈپٹی کمشنر

منڈی بہاؤالدین (بیوروچیف)ڈپٹی کمشنر طارق علی بسرا نے کہا ہے کہ ڈینگی سرویلینس کو روزانہ کی بنیاد پر یقینی بنایا جائے، انہوں نے کہا کہ لاروا سائیٹس پر ایس او پیز کی سر گرمیوں میں سو فیصد اضافہ کیا جائے، حکومت پنجاب کی ویب سائٹ پرمکمل اور درست ڈیٹا رکھنے کیلئے ماہر ڈیٹا آپریٹرز کی تعداد میں اضافہ کیا جائے اور ڈیٹا کی درستگی کو سو فیصد یقینی بنایاجائے۔ان خیالات کااظہار انہوں نے آج یہاں ڈپٹی کمشنر آفس میں ڈینگی ریسپانس کمیٹی برائے انسداد ڈینگی کے حوالے سے منعقدہ اجلا س کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل محمد شفیق، سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر محمد الیاس گوندل، ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت شیخ محمد اقبال، ڈپٹی ڈائریکٹر واٹر مینجمنٹ سعید اللہ علوی،اسسٹنٹ ڈائریکٹر شماریات سید اعجاز نقوی،ڈی ایچ اوز ڈاکٹر محمد افتخار، ڈاکٹر فضل اعوان،ڈی ڈی ایچ اوز ڈاکٹر شکیل اقبال بٹ، ڈاکٹر خالد عباسی،ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر یاسین ورک،تینوں تحصیلوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس منڈی ڈاکٹر اختر حسین بلوچ، پھالیہ ڈاکٹر بشری چوہدری،ملکوال ڈاکٹر ناصر وقار، ارسلان رؤف کے علاوہ دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔قبل ازیں سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر محمد الیاس گوندل نے اجلاس کو ان ڈور، آؤٹ ڈور ڈینگی سرویلنس،ڈینگی سپرے، انسداد ڈینگی سے متعلق ادویات کے سٹاک،ڈینگی لاروا سائیٹس کے معائنہ کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ اب تک کی کاروائی کے مطابق20ہاٹ سپاٹ جگہوں پر ڈینگی لاروا پایا گیا جس کی کیمیکل اور مکینیکل لاروا سائیڈنگ کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ضلع بھر میں ابھی تک ڈینگی کا کوئی مریض رپورٹ نہیں ہوا۔ ڈاکٹر الیاس گوندل نے بتایا کہ12سے 13اکتوبر 2020 تک ان ڈور71ہزار600گھروں کو چیک کیا گیا ہے جبکہ آؤٹ ڈور9ہزار60گھروں کو چیک کیا گیا۔ ڈینگی کے حوالے سے حفاظتی اقدامات نہ کرنے پر10ایف آئی آرز درج کروائی گئیں، ایک عمارت سیل اور529 نوٹسز بھی جاری کئے گئے ہیں جبکہ10 افراد کو ڈینگی ایس او پیز کی خلاف ورزی پر گرفتار بھی کروایا گیا۔بریفنگ سننے کے بعد ڈپٹی کمشنر طارق بسرا نے کہا کہ محکمہ صحت اور دیگر متعلقہ محکمے ڈینگی کے خاتمے کیلئے اپنا بھر پور کردار ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو ڈینگی کے تدارک اور روک تھام کیلئے زیادہ سے زیادہ آگاہی فراہم کی جائے۔ انہوں نے واضح کیا کہ انسداد ڈینگی رولز کی خلاف ورزی پر کسی سے کوئی رعائت نہ برتی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں