وزارت داخلہ نے اسلحہ لائسنسز سے متعلق زیر گردش نوٹیفیکشن کو جعلی قرار دے دیا

اسلام آباد(جے ایم ڈی )وزارت داخلہ نے اسلحہ لائسنسز سے متعلق میڈیا میں گردش کرنے والے نوٹیفیکیشن کو جعلی قرار دیتے ہوئے ممنوعہ بور کے اسلحہ لائسنس معطل یا منسوخ کرنے کی تردید کی ہے۔ذرائع وزارت داخلہ کے مطابق ممنوعہ بور کے اسلحہ لائسنس نہ تو معطل کئے گئے ہیں اور نہ ہی کینسل ، بلکہ لائسنسز کے لئے الگ الگ پالیسی تیارکی گئی ہے۔وزارت داخلہ کے ذرائع کے مطابق اسلحہ لائسنس کی پالیسی کی حتمی منظوری وفاقی کابینہ اوروزیراعظم دیں گے انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ غیرممنوعہ بورکے اسلحہ لائسنسزکوکمپیوٹرائزڈ کرانیکی آخری تاریخ تیس دسمبردوہزار سترہ ہے۔وزارت داخلہ کے ذرائع نے اسلحہ لائسنس سے متعلق میڈیا میں گردش کرنے والے نوٹیفیکشن کو بھی جعلی قرار دیا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز میڈیا میں زیر گردش نوٹیفیکشن کو بنیاد بناتے ہوئے بتایا گیا تھا کہ وزارت داخلہ کی جانب سے خودکار ہتھیاروں کے لائسنسوں کو معطل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اس حوالے سے اسلحہ لائسنس ہولڈرز کو دو اختیارات دینے کا فیصلہ کیا گیا تھا پہلے آپشن کے تحت آٹومیٹک لائسنس کو سیمی آٹومیٹک (نیم خودکار) میں تبدیل کروایا جاسکے گا، جس کے لئے پندرہ جنوری 2018ء تک متعلقہ ڈی پی او آفس سے تصدیق کروانا ہوگی، دوسرے آپشن کے تحت لائسنس ہولڈرز اپنا آٹومیٹک اسلحہ واپس کرسکتے ہیں جس کے عوض حکومت انہیں 50 ہزار روپے دے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں