لوراں میں نالے کیلئے مختص 30ملین سیاست اور کرپشن کی نظر مکینوں کا احتجاج

گجرات(نمائندہ خصوصی)یوسی مدینہ سیداں کے گاوں لوراں میں 30 ملین کی لاگت سے بننے وا لے سیوریج نالہ منصوبے سیاست اور کرپشن کی نظرہو گیا علاقہ مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا گاؤں لوراں کے مکینوں کا ڈی سی آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ٹھیکیدار کے خلاف نعرہ بازی مظاہرین کا کہنا تھا کہ سیوریج نالے میں ناقص میٹریل استعمال کیا گیا ہے جس سے نالہ حالیہ بارشوں کی وجہ سے گر ہے جس سے نالے کا گندہ پانی لوگوں کے گھروں اور گلیوں میں جمع ہو گیا ہے جس سے علاقہ مکینوں اور نمازیوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے جس پر ڈپٹی کمشنر سیف انور جپہ نے مظاہرین کو یقین دہانی کروائی کہ چند دن میں نالے کی دوبارہ تعمیر کا کام شروع کر دیا جائے گا جس کے بعدڈی سی سیف انور جپہ، ڈپٹی ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ جہانگیر بٹ کے ہمراہ لوراں گاؤں کا دورہ کیا ناقص میٹریل استعمال کرنے پر ٹھیکیدار کو ورنگ دی اور ایگزیکٹو انجینئر پبلک ہیلتھ کو خصوصی ہدایت جاری کرتے ہوئے کہاکہ محکمہ نالہ کی دوبارہ تعمیر کی خود نگرانی کرے تاکہ ٹھیکیدار دوبارہ ناقص میٹریل استعمال نہ کرسکے یاد رہے کہ مذکورہ نالے کے ٹھیکیدار کے خلاف محکمہ پبلک ہیلتھ نے سخت کاروائی کا فیصلہ کیا تھا مگر سیاسی مداخلت کی وجہ سے ٹھیکیدار کے خلاف کسی قسم کی کوئی کاروائی عمل نہیں لائی گئی تھی جس کے بعد علاقہ مکینوں کو دوبارہ ڈی سی آفس کے سامنے احتجاج کرنا پڑاجبکہ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ٹھیکیدار نے نالے کے فنڈز سے سابق چیئرمین کے ڈیرے کے اطراف جانے والے تین راستوں کو پختہ کیا گیا جس کی وجہ سے نالے کو مکمل کرنے کیلئے ناقص میٹریل استعمال کیا گیا ہے مظاہرین نے اعلیٰ حکام سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ ٹھیکیدار سمیت اپنے ڈیرے کے راستے سرکاری فنڈز سے تعمیر کروانے والے سابق چیئرمین کے خلاف انکوائری کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں