ملک میں سرمایہ کاری کرنیوالوں کی حوصلہ شکنی کی جا رہی ہے:مظفر عباس(فرانس)

دولت نگر(راجہ نصرت علی)اپنے وطن سے محبت، اپنے لوگوں کی فلاح اور علاقہ کی ترقی کے عزم کے ساتھ پاکستان میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں لیکن ہماری حوصلہ شکنی کی جارہی ہے۔سماج دشمن عناصر، ملک دشمن اور جرائم پیشہ لوگ ہمارے کاروبار کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کر رہے ہیں۔ضلعی انتظامیہ کو ملک و قوم کے وسیع تر مفاد میں اس کانوٹس لینا چاہیے۔ یہ بیان فرانس سے راجو آل میں عمرحیات برکس کمپنی (زگ زیگ ٹیکنالوجی) کے چیف ایگزیکٹو چوہدری مظفرعباس عرف صاحب نے سیل فون پر نمائندہ خصوصی کو ریکارڈکرایا۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے تھانہ ککرالی کے گاؤں راجووال میں اربوں روپے کی سرمایہ کاری سے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے برکس پلانٹ قائم کیاہوا ہے جس میں چار سو سے زائد لوگوں کو روزگار میسر ہے اور اس پلانٹ سے علاقہ میں آلودگی کا بالکل کوئی خطرہ نہیں ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ انہوں نے برکس پلانٹ کے قریب ہی ایک بہت بڑا ڈیری فارم قائم کیا ہے اور مزید پراجیکٹس پر بھی غور کر رہے ہیں۔لیکن انہوں نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا کہ کچھ لوگ انہیں سرمایہ کاری سے خوف زدہ کر رہے ہیں اور نہیں چاہتے کہ علاقہ کے وسیع تر مفاد میں یہاں پر کاروبار کو فروغ ہو اور لوگوں کو روزگار ملے۔انہوں نے دودن قبل اپنی برکس کمپنی کے مزدوروں کی ہراسگی کی مثال دیتے ہوئے کہاکہ وطن عزیز میں قانون کی حکمرانی کی اشد ضرورت ہے ورنہ یہاں تارکین وطن سرمایہ کاری نہیں کرپائیں گے اور ملکی معیشت ترقی نہیں کرسکے گی۔ چونکہ قانون شکن اور سماج دشمن عناصر دندناتے پھر رہے ہیں کوئی ان کو پوچھنے والا نہیں ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کل ہی ان کی برکس کمپنی کے ملازمین کو بلاجواز ماراپیٹاگیاہے تاکہ وہ بھاگ جائیں اور ہماری اربوں روپے کی سرمایہ کاری ضائع ہوجائے انہوں نے مزید بتایا کہ اس واقعہ کی تھانہ ککرالی میں ایف آئی آر بھی درج ہے اور اس کافائدہ تب ہی ہوسکتا ہے کہ پولیس قانون کے مطابق کاروائی کرے اور مجرموں کو گرفتار کر کے جلدازجلد عدالت میں پیش کرے۔ چوہدری مظفرعباس عرف صاحب نے ڈی سی گجرات اور ڈی پی او گجرات سے درخواست کی ہے کہ وہ معاملہ کی سنگینی کاادراک کریں اور پاکستانی تارکین وطن کی سرمایہ کاری کو تحفظ فراہم کریں اور انہیں جرائم پیشہ لوگوں سے بچانے کے خصوصی انتظامات کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں