سابق صدر پاکستان سوشل سنٹر شارجہ راجہ محمد سرفراز

خطہ کہسار سے تعلق رکھنے والے راجہ محمد سرفراز سابق صدر پاکستان سوشل سنٹر شارجہ کسی تعارف کے محتاج نہیں ہیں ۔ مہمان نواز ‘ خوش گفتار اور سماجی و رفاحی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں ۔ پاکستان اور پاکستانیوں کی خدمت ان کا نصب العین ہے ۔ بے پناہ مصروفیات کے باوجود فلاحی و رفاہی کاموں اور کمیونٹی کی بے لوث خدمت کے لئے وقت نکالتے ہیں ۔ یہی وجہ ہے کہ امارات میں ہر کوئی ان کی عزت و احترام کرتا ہے اور یہ سارے کام اتنی خاموشی سے کرتے ہیں کہ قریبی دوستوں کو بھی علم نہیں ہوتا گزشتہ دنوں اتفاق سے شارجہ کے مقامی ریسٹورنٹ میں جانے کا اتفاق ہوا ۔ وہاں راجہ محمد سرفراز نے امارات میں گزشتہ 42سالوں سے مقیم سیّد گل بہار شاہ کے اعزاز میں الوداعی تقریب کا اہتمام کیا ہوا تھا ۔ اتنی شاندار تقریب لیکن میڈیا کو دعوت نہیں دی ہوئی تھی ۔ راجہ صاحب بڑے پرتپاک طریقہ سے ملے اور دعوت دی کہ ہمارے ساتھ ظہرانہ میں شریک ہوں ۔ میں وہاں کسی اور کام سے گیا تھا ۔ لیکن جب سنا کہ سیّد گل بہار شاہ جو ایک طویل عرصہ سے یو اے ای میں بسلسلہ ملازمت مقیم ہیں ۔ اب مستقل طور پر پاکستان جا رہے ہیں تو میں نے روزنامہ جذبہ ڈاٹ کام کیلئے اُن سے گفتگو کی ۔
سیّد گل بہار شاہ نے بتایا کہ میری یو اے ای کے ساتھ خوشگوار یادیں وابستہ ہیں ۔ میں یو اے ای 1976ء میں پہلی مرتبہ ایک تعمیراتی کمپنی میں آیا ۔ دوبئی اس وقت ایسا نہیں تھا شیخ زاہد روڈ پر ٹریڈ سنٹر کی تعمیر شروع ہوئی تھی ۔ دور دور تک صحرا اور ریت نظر آتی تھی ۔ ٹریڈ سنٹر کے سامنے ایک چھوٹا سے پیٹرول پمپ تھا۔دوبئی سے ابو ظہبی جانے کیلئے گھنٹوں وقت درکار ہوتا تھا ۔ میری کئی مرتبہ دورانِ ملازمت شیخ راشد المکتوم مرحوم کے ساتھ ملاقات ہوئی ۔ وہ پاکستان اور پاکستانیوں سے بے حد محبت کرتے تھے ۔ یو اے ای ہمارا دوسرا گھر ہے مجھے میاں جو محبت ‘ سیکورٹی خلوص اور روزگار کے مواقع ملے ہیں ۔ میں انہیں کبھی نہیں بھلا سکوں گا ۔ یو اے ای حکومت نے بھی ہمارا بہت خیال رکھا ۔ جس کیلئے میں مشکور ہوں گزشتہ پچیس سالوں سے میں راجہ سرفراز کے ساتھ کام کر رہا ہوں ۔ یہ ہر لحاظ سے مہربان اور بہترین دوست ہیں ۔ اپنے ملازموں کا بہت خیال رکھتے ہیں میں ان کا بھی بے حد مشکور ہوں کہ میرے اعزاز میں پُروقار اور شاندار تقریب کا اہتمام کیا ۔ سیّد گل بہار شاہ نے بتایا کہ میرے چار بیٹے ہیں جن میں سے اب دو بیٹے امارات میں مختلف کمپنیوں میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں میں نے اپنے بچوں کو بھی بتایا ہے کہ زندگی میں کامیاب ہونے کیلئے محنت ‘ سچائی ‘ قناعت پسندی بہت ضروری ہے جس ملک میں بھی رہو ۔ اپنا کام ایمان داری اور خلوص سے کرو ۔ وہاں کے قوانین کی پابندی کرو ۔ کامیابی آپ کے قدم چومے گی ۔ میزبان راجہ محمد سرفراز نے بتایا کہ سیّد گل بہار شاہ محنتی اور دیانت دار شخصیت تھے ۔ اپنے کام کو عبادت سمجھ کر کرتے ہیں ان کے بطور انچارج اور ساتھی ورکرز بہت محبت کرتے تھے یہ مشکل سے مشکل کام کو بھی آسان طریقہ سے حل کر لیتے ہیں اور کام کو جلد از جلد مقررہ وقت سے پہلے ہی پایہ تکمیل تک پہنچاتے ۔ میرے گروپ آف کمپنیز کے تمام سٹاف والے ان کی کمی قدم قدم پر محسوس کریں گے ۔ میری دعا ہے کہ اپنے وطن میں صحت و تندرستی کے ساتھ خوش رہیں مجھے بے حد خوشی ہے کہ سیّد گل بہار شاہ مستقل اپنے دیس جا رہے ہیں دکھ ہے کہ ایک محنتی اور ایماندار ساتھی کو الوداع کر رہے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں