چوہدری وجاہت حسین اور طارق بشیر چیمہ میں نجی ٹی وی پروگرام میں شدید تلخ کلامی

گجرات (مانیٹرنگ ڈیسک )مسلم لیگ(ق) کے دو سینئر رہنماؤں طارق بشیر چیمہ اور چوہدری وجاہت حسین کے درمیان گزشتہ روز ایک نجی ٹی وی چےنل کے پروگرام میں شدید تلخ کلامی ہوئی مسلم لیگ (ق) کی حالیہ سیاست اور مختلف فیصلوں کے حوالے سے دونوں صاحبان ایک دوسرے کے آمنے سامنے آ گئے۔وجاہت حسین نے کہا کہ میں نے ایک رات پہلے جا کر شجاعت صاحب کو جا کر بتا دیا تھا کہ میں عوامی طور پر جا کر معافی نہیں مانگوں گا اور میں اپنی با ت پر قائم ہوں اور انکو میں عید سے ایک رات پہلے خدا حافظ کہہ کر گاؤں چلا گیا تھا ۔ اس کے ریکشن میں چوہدری شجاعت حسین خاموش تھے میں نے انہیں گاڑی میں بٹھایا اور کہا کہ آپ کنجاہ چلے جائیں تو وہ پھر کنجاہ چلے گئے ۔ سابق وفاقی وزیر چوہدری وجاہت حسین کا پروگرام میں کہنا تھا کہ طارق بشیر چیمہ نے ہمارے خاندان کو تقسیم کیا ہوا ہے یہ آپ کے پروگرام میں بیٹھ کر مسلسل جھوٹ پر جھوٹ بولے جا رہے ہیں ۔ طارق بشیر چیمہ کی گفتگو کے جواب میں انہوں نے کہا کہ چوہدری شجاعت حسین میرے بڑے بھائی ہیں یہ ان کو تمیز سے مخاطب کریں اور اپنی زبان کو لگام دیں نہیں تو میں الذوالفقار سے شروع کروں گا ۔ طارق بشیر چیمہ نے کہا کہ جب ہم گزشتہ تین ماہ سے ڈائیلاگ کر رہے تھے تو مونس الٰہی میں اخلاقی جرات ہونی چاہیے تھی کہ وہ ہمیں بتا دیتے وہ اکےلے ہی بنی گالہ پہنچ گئے چوہدری وجاہت حسین کی گفتگو کے دوران انہوں نے کہا کہ یہ گجرات نہیں ہے کہ آپ جو مرضی کریں یہ باتیں جا کر گجرات والوں کو سنائیں اگر آپ کو چوہدری شجاعت حسین کا درد زیادہ ہے تو ان کو رلنے کیلئے کیوں چھوڑا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں