اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ، مہنگائی کی شرح 37.6 فیصد پر پہنچ گئی

ہفتہ وار بنیادوں پر مہنگائی کی شرح میں 3.68 کا فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے، مہنگائی کی شرح 37.6 فیصد کی سطح پر پہنچ گئی۔
ادارہ شماریات کی رپورٹ کے مطابق حالیہ ہفتے کے دوران 30 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے۔ گھی، دالیں، چاول، آلو، ٹماٹر، دودھ دہی، چینی گوشت کی قیمتیں بڑھ گئی ہے۔
رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ایک ہفتے میں ٹماٹر کی فی کلو قیمت میں 11 روپے کا اضافہ، دال مسور 12 روپے، دال ماش 9 روپے 34 پیسے فی کلو مہنگی ہوگئی، دال چنا 5 روپے 30 پیسے، دال مونگ 3 روپے فی کلو مزید مہنگی ہو گئی۔
رپورٹ کے مطابق اڑھائی کلو کا گھی کا ٹین 25 روپے مزید مہنگا ہو کر 1426 روپے کا ہو گیا، لہسن کی فی کلو قیمت میں 5 روپے 42 پیسے کا ایک ہفتے میں اضافہ ہوا، آلو کی فی کلو قیمت میں 28 پیسے، دودھ کی فی کلو قیمت میں 56 پیسے، چینی کی فی کلو قیمت میں 29 پیسے، مٹن کی قیمت میں 3.45 روپے کا اضافہ ہوا ہے
ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ حالیہ ہفتے بجلی کے فی یونٹ میں 1.88 روپے کا اضافہ بھی ہوا ہے۔
اس کے علاوہ پیاز، آٹے کے تھیلے، انڈوں اور فی درجن کیلا کی قیمت میں کمی بھی ریکارڈ کی گئی ہے، پیاز کی فی کلو قیمت میں 19 روپے، انڈوں کی فی درجن قیمت میں 30 پیسے کمی ہوئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں