ضلع گجرات سے ہی الیکشن لڑوں گا :چوہدری شافع حسین

گجرات(صابر علی صابر)پاکستان مسلم لیگ (ق) کے صدر وسابق وزیراعظم چوہدری شجاعت حسین کے صاحبزادے و پاکستان کبڈی ایسوسی ایشن کے صدر چوہدری شافع حسین نے کہا ہے کہ کبڈی کے حوالے سے اب زیادہ باتیں کرنا کم کر دی ہیں کہ کہیں سب یہ نہ سمجھ لیں کہ یہ کبڈی کی طرف چلے گئے ہیں اور سیاست میں انہوں نے آنا ہی نہیں ہے لیکن انشاء اللہ موقع ملا تو ضلع گجرات سے ہی الیکشن لڑوں گا تاہم حلقے کا ابھی پتہ نہیں ہے کہ کونسا ہوگا بس دعا کریں کہ مجھے بھی موقع ملے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گجرات پریس کلب میں آ کر نو منتخب صدر ملک شفقت اعوان، جنرل سیکرٹری سید نوید شاہ اور دیگر نو منتخب عہدیداران کو مبارکباد دیتے ہوئے کیا چوہدری شافع حسین نے کہا کہ اس وقت ملک میں مہنگائی کا بہت بڑا مسئلہ چل رہا ہے روزمرہ کی بنیادی چیزوں ٹماٹر،آلو،پیاز وغیرہ کا کا ڈالر کی قیمت سے کوئی تعلق نہیں ہے موجودہ حکومت کو برسراقتدار آئے ہوئے 3 سال ہو چکے ہیں وفاقی وزراء کو چاہیے کہ وہ اپنے اپنے محکموں کی کارکردگی ٹاک شوز میں پیش کریں کہ انہوں نے عوام کے لئے کیا کیا انہوں نے کہا کہ مہنگائی کم کرنے کیلئے حکومت کو چاہیے کہ وہ پرائس کنٹرول کمیٹیوں کو فعال کریں پرائس کنٹرول کمیٹیاں فعال ہونے سے مہنگائی میں کمی آ سکتی ہے اس حوالے سے ڈپٹی کمشنرز کو عملی طور پر اقدامات کرنے ہونگے چوہدری شافع حسین نے کہا کہ گجرات کے صحافیوں کیساتھ ہمارے خاندان کا تعلق مضبوط ہے چوہدری پرویز الہٰی اور چوہدری شجاعت حسین ان سے رابطے میں رہتے ہیں گجرات میں ذمہ دارانہ صحافت ہو رہی ہے جو خوش آئند ہے لیکن موجودہ حالات میں صحافی برادری کو مزید محتاط ہوکر فرائض سرانجام دینا چاہے کہ وہ کسی کے حوالے سے کوئی خبر شائع کرنے سے پہلے سو فیصد اس کی تصدیق کر لیا کریں کیونکہ خصوصاً الیکٹرانک میڈیا میں غیر مصدقہ خبر چل جائے تو متعلقہ خاندان کو جس کوفت کا سامنا کرنا پڑتا ہے اسے الفاظ میں بیان کرنا مشکل ہے دوسرے ممالک میں اس حوالے سے سخت قوانین ہیں مگر ہمارے ملک میں قوانین اس حوالے سے نرم ہیں چوہدری شافع حسین نے کہا کہ چوہدری شجاعت حسین نے گجرات کے صحافیوں کو اپنے گھر کا فرد سمجھا ہے اور میں بھی یہاں کئی ایسے صحافیوں کو بچپن سے جانتا ہوں جو آج بھی بہت بہترصحافت کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ چوہدری پرویزالہٰی نے نہ صرف گجرات بلکہ پنجاب کے صحافیوں کیلئے صحافی کالونیاں بنائیں اور یہ سلسلہ آئندہ بھی جاری رہے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں