جرمنی میں طوفانی بارشوں نے تباہی مچا دی (رپورٹ : افتخار احمد )

گزشتہ دنوں ہونے والی شدید بارشوں نے جرمنی کے بیشتر حصوں میں تباہی مچا دی جن میں سب سے زیادہ متاثر ہونے والے صوبے Rheinland-Pfalz اور Nordrhein-Westfalen ہیں صدی کی بدترین بارشوں سے ملک کے بہت سے حصوں میں نظام زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا ابھی تک ہلاکتوں کی تعداد ایک سو دس اور لاپتہ افراد کی ایک ہزار سے زائد بتائی جا رہی ہے جن میں لمحہ بہ لمحہ اضافہ ہوتا جا رہا ہے منہدم عمارات کے ملبہ کو ہٹا کر انسانوں کو تلاش کرنے کا کام زور وشور سے جاری ہے جس میں شہری حکومت کے ساتھ فوج بھی بھرپور مدد کر رہی ہے ڈوسلڈوف کے قریب ہاگن شہر میں ہنگامی صورتحال کا اعلان کر دیا گیا ہے جہاں گھروں سے پانی نکالنے کا کام فوج کے سپرد کیا گیا ہے بون کے شمالی علاقے میں ریسکیو کے دوران دو فائر فائٹرز کی ہلاکتوں کی خبر بھی سامنے آئی ہے سیلابی صورتحال کے باعث موٹر ویز ، عام سڑکوں اور ریلوے کا نظام بری طرح متاثر ہوا ہے کھلے علاقوں میں ریل کی پٹریاں پانی کی زد میں ہیں محکمہ ریلوے نے مسافروں کو سفر میں احتیاط برتنے کا سرکلر جاری کر رکھا ہے دیہی علاقوں میں جہاں زمیندار اپنے قیمتی مویشیوں سے ہاتھ دھو بیٹھے وہاں ان کی کھڑی فصلوں کو بھی نقصان پہنچا ہے بہت ساری گاڑیاں پانی میں تیرتی نظر آ رہی ہیں گھروں کی بیسمنٹ میں پانی بھر جانے کی وجہ سے بجلی منقطع اور ٹیلیفون بند ہیں رائن لینڈ فالز کا شہر Ahrweiler سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے متاثرین کو محفوظ مقامات پر پہنچانے اور لاپتہ افراد کو ڈھونڈنے کا کام مسلسل جاری ہے شہری حکومتںں فوجی جوان جس سرعت سے امدادی کارروائیاں جاری رکھے ہوئے ہیں انہیں دیکھتے ہوئے کہا جا سکتا ہے کہ اگر مزید بارشیں نہ ہوئیں تو چند روز کے اندر اندر خراب صورتحال پر جلد قابو پا لیا جائے گا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں