دنیاکی آدھی سے زیادہ آبادی کو کروناویکسین لگ گئی، رپورٹ

عالمی اداروں کے مطابق دنیا کی کُل آبادی ساڑھے 7 ارب کے قریب ہے، اور اب تک دنیا کی آدھی سے زیادہ آبادی 4 ارب انسانوں کو کرونا ویکسین لگ چکی ہے۔
فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق دنیا میں کرونا ویکسین لگنے کا عمل تھوڑا سُست ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق پہلے ایک ارب افراد کو ویکسین 140 دنوں میں ویکسین لگی، دوسرے ایک ارب افراد کو یہ ویکسین کی ترسیل 40 روز میں ہوئی، اس کے بعد تیسرے ایک ارب افراد کی 26 روز اور چوتھے ایک ارب افراد کی ویکسینیشن ایک ماہ میں ہوئی۔
میڈیا رپورٹ کے مطابق دنیا میں سب سے زیادہ ویکسینیشن کرنے والے ممالک میں چین کا پہلا نمبر ہے، جہاں اب تک ایک ارب 60 کروڑ (تقریباً 40 فیصد) افراد کو ویکسین لگ چکی ہے، اس کے بعد بھارت کا نمبر آتا ہے، وہاں 40 کروڑ انسانوں جبکہ امریکا میں 34 کروڑ افراد کی ویکسینیشن ہوچکی ہے۔
اے ایف پی کے مطابق متحدہ عرب امارات میں کل آبادی کے 70 فیصد کے قریب ویکسین لگ چکی ہے، بحرین اور یوراگوئے میں 60 فیصد سے زائد لوگوں کی ویکسینیشن کا عمل مکمل ہوچکا ہے۔
ان کے بعد قطر، چلی اور کینیڈا، اسرائیل، سنگاپور، برطانیہ، منگولیا اور ڈنمارک اور بیلجیم کا نمبر آتا ہے۔ ان ممالک نے تقریباً اپنی آدھی آبادی کو ویکسین لگا لی ہے۔
غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکا اور یورپی یونین نے بھی اپنی آدھی آبادی کو ویکسین لگادی ہے۔
دنیا کے غریب ممالک میں نسبتاً دیر سے ویکسینیشن کا عمل شروع ہوا اور یہ کوویکس اور امیر ممالک کی جانب سے ویکسین عطیہ کئے جانے کے باعث ممکن ہوسکا۔
اوسطاً دنیا بھر میں ہر 100 افراد میں سے52 کو ویکسین لگ چکی ہے، تین ممالک برونڈی، ایریٹیریا اور شمالی کوریا میں تاحال ویکسینیشن کا عمل شروع ہی نہیں ہوسکا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں