گجرات چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا پہلا مجلس عاملہ اجلاس

گجرات (نمائندہ خصوصی)گجرات چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا پہلا مجلس عاملہ اجلاس 2020-21 چوہدری وحید الدین ٹانڈہ صدر چیمبر کی زیرصدارت منعقد ہوا۔اجلاس کا آغاز تلاوت قرآن پاک سے ہوا۔ جس کے بعد نعت رسول مقبولؐ اور درود پاک کا ذکر کیا گیا۔ اس کے بعد سیکرٹری جنرل چیمبر نے سابقہ کارروائی اور بلز کی اپروول لی جس کے بعد پچھلے ماہ کی کارکردگی رپورٹ پڑھ کر سنائی گئی۔چوہدری وحید الدین صدر چیمبر نے اپنے استقبالیہ خطاب میں کہا کہ تمام ایگزیکٹو ممبران کو خوش آمدید کہتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کرتا ہوں کہ اس نے ہمیں بزنس کمیونٹی کی خدمت کا موقع دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہر منصوبہ ٹیم ورک کا نتیجہ ہوتا ہے۔ اس لئے ایگزیکٹو کمیٹی سے ہر معاملے میں مشاورت کروں گا۔ بزنس کمیونٹی کے مسائل کا حل اولین ترجیح ہے اور تمام بزنسز چاہے مینو فیکچرنگ ہو، ٹریڈنگ ہو یا سروسز اس کی گروتھ کیلئے کام کرنا ہے۔ آپ سب سے بھی گزارش ہے کہ اپنی تجاویز ضرور دیں۔ جو منصوبے ترجیحات میں شامل ہیں ان میں انڈسٹریل اسٹیٹ کا قیام شامل ہے جس کے لئے نمبر پلیٹ فورم اور سطح پر آواز پہنچائیں گے۔ گجرات ایک صنعتی شہر ہے لیکن اس صنعت کو ایکسپورٹ سیکٹر میں بننے میں ایک بڑی رکاوٹ انڈسٹریل اسٹیٹ ہے کیونکہ اب گلی محلوں میں انڈسٹری لگ رہی ہے جس سے دوسرے مسائل پیدا ہو رہے ہیں۔ اس سلسلے میں کمشنر گوجرانوالہ سے متعدد بار میٹنگز ہو چکی ہیں۔ ڈی سی گجرات بھی کچھ ہفتوں پہلے تشریف لائے۔ ان سے بھی بات ہوئی اور اس کے علاوہ ایڈوائزر کامرس عبدالرزاق سے ان کے دورہ کے دوران بات ہوئی اور اس نے بھی آن لائن میٹنگ میں ان سے ون آن ون اس منصوبے میں سپورٹ کیلئے کہا۔ انہوں نے یقین دلایا کہ جلد وزیراعلیٰ پنجاب سے اس سلسلے میں چیمبر کی میٹنگ ارینج کروا دیں گے۔ چوہدری مونس الٰہی سے بھی تفصیلی بات ہوئی انہوں نے بھی یقین دلایا کہ سیاسی طور پر وہ بھی بزنس کمیونٹی کے اس منصوبے کی سرپرستی کریں گے بلکہ انہوں نے پرپوز کیا کہ چائنیز کمپنی سے یہ منصوبے مکمل کروایا جانا چاہئے۔ اس کے لئے ایک جگہ سرگودھا روڈ پر ہے جس کی نشاندہی پہلے کی گئی تھی۔ انڈسٹریل اسٹیٹ کی صفائی اور سیوریج کے مسائل کے حل کیلئے ڈی سی صاحب اور انڈسٹریلسٹس سے مسلسل رابطے میں ہیں اور اس میں پوری کوشش ہو گی کہ جو جو جس کی ذمہ داری ہے وہ پوری کرے۔ گولڈن ٹرائی اینگل کے لئے ایکسپو سنٹر کے منصوبے پر بھی تینوں چیمبرز کے صدور اور ڈی سی اوز اور کمشنر گوجرانوالہ کے درمیان میٹنگ سیشنز ہوئے ہیں اور اس میں بھی گجرات اور گوجرانوالہ چیمبر کا مؤقف ہے کہ یہ سنٹرل لوکیشن وزیرآباد میں بننا چاہئے اور اس کے لئے ابھی ڈسکشنزجاری ہیں۔ اس کے لئے جگہ کی نشاندہی گوجرانوالہ چیمبر کے ساتھ مل کر کریں گے۔انہو ں نے مزید کہا کہ ہمارے بزنس مینوں میں صلاحیت موجود ہے اگر حکومت مکمل سرپرستی کرے اور پرائیویٹ سیکٹر کو پالیسی بکنگ میں مسلسل شامل رکھے تو گجرات، منڈی بہاؤالدین مزید ابھر کر معاشی ترقی میں اپنا حصہ ڈالیں گے۔ انہوں نے کہا پچھلے سال ایکٹیویٹیز کچھ کم ہی ہیں لیکن ابھی حالات بہتر ہیں اس لئے اپنے پروگرامز کو ریگولر طریقے سے آرگنائز کریں گے تاکہ ہم بزنس کمیونٹی کو سپورٹ کر سکیں۔ ٹریڈ ڈیلی گیشنز بھی ترتیب دیں گے۔ موجودہ صورتحال میں جو ممالک اوپن ہیں اور وہاں بزنس کے مواقع موجود ہیں۔ وہاں کے لئے پلان بنائیں گے۔ انہوں نے کہا پاکستان یونین ناروے کے چیئرمین قمر اقبال ہمارے پاس تشریف لائے تھے۔ انہوں نے بھی آفردی ہے کہ وہ گجرات، منڈی بہاؤالدین کی مصنوعات کے ناروے میں فروغ کیلئے ہماری معاونت کریں گے۔ انہوں نے ہمیں گزارش کی ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کے حل کیلئے گجرات چیمبر میں ایک ہیلپ ڈیسک بنایا جائے اس کے لئے ہم جلد ایک ہیلپ ڈیسک کا قیام عمل میں لائیں گے۔ اس کے بعد ہاؤس نے FPCCI کی جنرل باڈی اور ایگزیکٹو باڈی برائے سال 2020-21 کے لئے گجرات چیمبر کی طرف سے نامینیشن کی اپروول دی جس میں حاجی عرفان یوسف کو ایگزیکٹو باڈی ممبر کیلئے اور ثوبان ظہیر بٹ کو جنرل باڈی ممبر کے لئے نامزد کیا گیا۔سٹینڈنگ کمیٹیز کے طریقہ کار کے لئے مشاورت کے حوالے سے صدر چیمبر نے کہا کہ ہم اس کیلئے صرف تجربہ کار serious اور اہل لوگوں کا انتخاب کریں گے۔ جو اس میں ٹائم دیں اور اپنے علاقہ اور شعبہ کے متعلقہ مسائل حل کروا سکیں۔ اس کے لئے ایگزیکٹو ممبرانم کو ان کی ڈیوٹی دیں گے کہ وہ چیمبر کی کارکردگی کا جائزہ لیں۔ میر اختشام الحق ایگزیکٹو ممبر نے کہا اس کے لئے ہمیں تینوں شعبوں میں دیکھنا ہو گا اور مینو فیکچرنگ، ٹریڈنگ اور سروسز سے لوگوں کو شامل کرنا ہو گا۔ ہمیں ان کی کارکردگی کو جانچنا ہو گا۔ Key Post پر Obligement کی بجائے کارکردگی کو اہمیت دی جانی چاہئے۔ نبیل رمضان ایگزیکٹو ممبر نے کہا ہر ایک ایگزیکٹو ممبر کو دو دو کمیٹیوں کی مانیٹرنگ کی ذمہ داری دی جانی چاہئے۔ انصر قذافی ایگزیکٹو ممبر نے کہا ہمیں پاورفل کمیٹیز بنانا ہوں گی۔ جو کہ سٹینڈ لے سکیں اور ان کو بیک اپ کرنا ہو گا۔ خصوصاً ایف بی آر پولیس ایڈمنسٹریشن اور دیگر اہم کمیٹیز کیلئے اہل اور تجربہ کار ممبران کا انتخاب کیا جانا چاہئے۔ چیمبر سب کا ادارہ ہے۔ سب کو چھتری کے نیچے لانا ہو گا خصوصاً ٹریڈرزیہ محسوس نہ کریں کہ وہ اس کا حصہ نہیں ہیں۔ نعیم امتیاز گوندل ایگزیکٹو ممبر نے کہا کہ کمیٹیز مضبوط ہونی چاہئیں اور انہیں ریگولر میٹنگز کرنا چاہیں اور ایگزیکٹو کمیٹی کو ان کی پرفارمنس کو مانیٹر کرنا چاہئے۔ صدر چیمبر نے کہا کہ کمیٹیز مرتب کرنے سے پہلے امیدواروں کے انٹرویوز بھی کریں گے۔غلام محی الدین ایگزیکٹو ممبر نے کہا میری گزارش ہے کہ سٹینڈنگ کمیٹیز کی کارکردگی کو ماہانہ کارکردگی رپورٹ کا حصہ بنایا جائے۔صدر چیمبر نے ہاؤس میں شیئر کیا۔ ایڈوائزر کامرس نے ایک ہائی لیول ٹیکنیکل کمیٹی کا قیام عمل میں لایا ہے اور اس کے کچھ TOR’s بنائے گئے ہیں اور اس سلسلے میں چیمبر سے پرپوزلز مانگی گئی ہیں۔ اس سلسلے میں آپ سے ان پٹ کی رکویسٹ کی تھی۔آپ تجاویز شیئر کریں۔ میر اختشام نے کہا تمام بڑے ٹیکسیشن کے مسائل کا حل یہ ہے کہ ایف بی آر کو ختم کر دیا جائے اور ٹیکس ویلیو ہر ایک بندے پر عائد کر دیا جائے۔ مینو فیکچرز کے لئے سیلز ٹیکس اور باقی تمام بزنسز پر 0.25% ٹرن اوور یا انکم ٹیکس کا اطلاق کر دیا جائے۔ اس سے ٹیکس نیٹ وسیع ہو گا اور 25.26 لاکھ سے بڑھ کر یہ 50.60 لاکھ جلد چلا جائے گا جس سے پہلے سے موجود ٹیکس پیرز پر بوجھ میں کمی آئے گی۔ پروڈکشن کاسٹ میں کمی لانا ہو گی تاکہ پروڈکشن کو compatative بنایا جائے۔ انصر قذافی ایگزیکٹو ممبر نے کہا ٹیکس نیٹ کو بڑھانا ہو گا۔ اس کے لئے ہمیں کوشش کرنا ہو گی اوردوسروں کو motivate کرنا ہو گا۔ لیکن اس سلسلے میں ایف بی آر کی طرف سے بھی رکاوٹیں ہیں جو ختم ہونی چاہئے۔ ملک اظہار احمد ایگزیکٹو ممبر نے کہا کہ ہمیں Certification ISO کی طرف جانا ہو گا۔ سٹوڈنٹس میں امپورومنٹ لانا ہو گی۔ اس کے لئے سب کو encourage کرنا ہو گا۔ اگر سسٹم کلچر کو جدید بنائیں اس میں منسٹری آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی گرانٹس جاری ہیں۔انہوں نے رائے دی کہ تینوں چیمبرز ایک گرینڈ الائنس بننا چاہئے جو طاقتور فورم ہو اور ان تینوں شہروں کی بزنس کمیونٹی کے ہر مسئلے کیلئے stance ہو سکے۔ ٹریڈ ٹیکس وہ بزنسز کے مطابق ہونی چاہئے اور ہائی ٹیک کے حصول اور سیلز کو بڑھانے کیلئے ہوں۔ چھوٹی یونینز کا الحاق کروانا ہو گا۔ ثوبان ظہیر بٹ سابق صدر چیمبر نے کہا گجرات چیمبر کی اچھی روایت ہے کہ اس کی فیصلہ سازی میں سابقہ صدور سینئر ممبران کی رائے کو اہمیت دی جاتی ہے اور اس کا فائدہ ا س لحاظ سے ہے کہ وہ تمام مسائل اور معاملات پر فیڈ بیک دینے کی صلاحیت رکھتے ہوں۔ انہوں نے کہا کہ سٹینڈنگ کمیٹیز میں Obligement کی بجائے کارکردگی کو اہمیت دینا ہو گی۔ خرم وڑائچ ایگزیکٹو ممبر نے کہا ہمیں خوشی ہے کہ ہمارے ساتھ سینئرز موجود ہیں ہمیں اپنے matter میں بہتری لانا ہو گی۔ انڈسٹریل اسٹیٹ کے منصوبے اور دیگر پراجیکٹس کے سلسلے میں آفس عہدیداران کے ساتھ بھرپور طریقے سے اپنا رول نبھائیں گے۔ محمد اعظم ایگزیکٹو ممبر نے کہا میری شرف سے تمام نو منتخب ایگزیکٹو ممبران کو مبارکباد ہو۔ حماد اسلم نائب صدر چیمبر نے کہا ہم آر اینڈ ڈی کے لئے کام کریں گے اجو ربجٹ ہمیں دیا گیا ہے ا س سے اس کو بہتر کریں گے۔ریسرچ اور انفارمیشن ہو گی تو گجرات چیمبر کی پروڈکشن بہتر ہو گی۔ حسن عادل سینئر نائب صدر چیمبر نے آخر میں ممبران کا شکریہ ادا کیا کہ ہمیں ایک دوسرے کی اصلاح کرنا ہو گی۔ مسلسل بہتری کے عمل کو جاری رکھنا ہو گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں