ڈسپوزلوں سے پمپ اور ایم این اے فنڈ سے 7کروڑ فنڈز بھی غائب ہے: حاجی ناصر

گجرات(وقائع نگار) صدر شاہین گروپ و سابق میئر میونسپل کارپوریشن حاجی ناصر محمود نے گجرات چیمبر میں ڈی سی گجرات سیف انور جپہ کی آمد کے موقع پر ان کی توجہ گجرات شہر کے ڈسپوزلو ں پر دلائی کہ انکوائری کی جائے کہ گجرات کے تما م ڈسپوزلوں پر سارے پمپ غائب ہو چکے ہیں جو کہ میں نے اپنے دور میں لگوائے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ڈسپوزل سکیموں کے لئے ساڑھے 7 کروڑ روپے کے ایم این اے کے فنڈز پیسے کا ضیاع ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ رتی کالرہ، سمال انڈسٹریز اسٹیٹ، نارووالی اور دیگر علاقوں میں لگائے جانے والے ڈسپوزل پمپ کی خرید کے لئے ایک کروڑروپے کی کوٹیشنین آئیں جبکہ میں نے 9، 9 لاکھ روپے کے یہ پمپ لگوائے جس کے بعد گجرات شہر میں 2، 2 دن پانی نہیں اترتا تھا وہ 22 گھنٹے کے بعد اتر جاتا تھا۔ انہوں نے کہا میری 20 کروڑکی سکیمیں تھیں اور صرف 9 کروڑ روپے استعمال کئے گئے اور جو فنڈز اب آرہا ہے اس کا پتہ نہیں چل رہا۔ انہوں نے کہا کہ سمال انڈسٹریز اسٹیٹ ایریا میں پانی کھڑا ہونے کی وجہ عملہ کی کمی ہے جو ایمانداری سے ڈیوٹی نہیں دے رہے، 8، 8 ملازمین کی وہاں ڈیوٹی لگائی گئی ہے مگر وہ اپنی ڈیوٹی صحیح سرانجام نہیں دے رہے اس کی انکوائری کی جائے۔ سابق صدر عامر نعمان نے کہا کہ ڈی سی گجرات سمال انڈسٹریز اسٹیٹ ایریا کا اچانک وزٹ کریں تاکہ انہیں علم ہو سکے کہ ایریا کی حالت ابتر ہو چکی ہے۔ ندیم احمد سندھو نے کہا کہ گیپکو کو انڈسٹری کے لئے جلد کنیکشن دینے کی ہدایات کی جائیں۔ مرز االطاف بیگ نے کہا کہ سرائے عالمگیر میں 40 کنال اراضی سٹیڈیم کیلئے وقف کی گئی تھی اور ا س کی 3 کروڑ کی گرانٹ بھی جاری ہوئی مگر اب اس اراضی پر لوگ قبضہ کر رہے ہیں۔ ڈی سی نوٹس لیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں