پاکستان میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 1597ہو گئی 14جاں بحق

اسلام آباد پاکستان میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد میں ایک بار پھر اضافہ ہوگیا جس کے بعد مریضوں کی مجموعی تعداد 1597 ہوگئی ہے۔سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران پاکستان میں کورونا وائرس کے مزید 45 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد مریضوں کی مجموعی تعداد 1597 ہوگئی ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران پاکستان میں اس وبا سے ایک شخص جان کی بازی ہارا ہے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 16 ہوگئی ہے۔ اس وقت ملک بھر میں 11 مریض ایسے ہیں جن کی حالت تشویشناک ہے جبکہ 28 مریض اب تک صحتیاب ہوچکے ہیں۔پاکستان میں کورونا وائرس کے سب سے زیادہ مثبت کیسز پنجاب میں ہیں جہاں مریضوں کی تعداد 593 ہوگئی ہے۔ سندھ میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 502، خیبر پختونخوا میں 192، بلوچستان میں 141، گلگت بلتستان میں 116، اسلام آباد میں 43 اور آزاد جموں و کشمیر میں 6 ہے۔یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز نے کورونا سے بچاوَ کیلئے حفاظتی لباس تیارکرلیا۔ یونیورسٹی کی جانب سے ڈاکٹرز اور عملے کو حفاظتی لباس مفت دیاجائیگا۔قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا ہے کہ بروقت اقدامات نہ ہونے سے ہلاکتوں کی ذمہ داری وزیراعظم پر ہوگی، کورونا وائرس کے حوالے سے وفاقی حکومت نے بہت سارا قیمتی وقت سوچ بچار اور شش وپنج میں ضائع کیا۔ان کاکہنا تھا کہ اس وقت پورے ملک اور قوم کو مشکل ترین چیلنج کا سامنا ہے، اللہ تعالی کی مدد، درست حکمت عملی اور بروقت فیصلوں سے چیلنج پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ کورونا وائرس سے بچاؤ کے پیش نظر لاک ڈاؤن پر پولیس نے سختی شروع کر دی،پولیس نے گھروں سے غیر ضروری باہر گھومنے والے 1800 افراد سے ضمانتی مچلکے لے لئے۔ کورونا کے خطرات کے پیش نظر قیدیوں کو کیمپ جیل سے منتقل کیا جانے لگا، 500 سے زائد قیدیوں کو حافظ آباد جیل منتقل کردیا گیا، خالی بیرکس میں قرنطینہ سنٹر اور سو بیڈ کا ہسپتال بنایا جائے گا۔بلوچستان حکومت کی جانب سے جاری اعلامیہ میں کہاگیا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث قیدیوں کی سزاوں میں کمی کافیصلہ کیا ہے،ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ نے کہاہے کہ قیدیوں کی سزاوں میں 4 ماہ معافی کااعلان کیا گیا ہے،معافی کااطلاق دہشتگردی،سنگین جرائم والے قیدیوں پرنہیں ہوگا۔قومی رابطہ کمیٹی نے کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے 4 اپریل تک اندرون وبیرون ملک ایئر ٹریفک معطل اور دوہفتوں تک مشرقی و مغربی سرحدیں بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔اسلام آباد میں صحافیوں کو قومی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں سے آگاہ کرتے ہوئے وزیر اعظم کے مشیر قومی سلامتی معید یوسف کا کہنا تھا کہ 29مارچ سے چار اپریل تک باہر جانے والی پروازوں پر بھی ممانعت اورایئرتریفک کو بند رکھا ہیجائے گا۔مسلم لیگ (ن) نے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے“کورونا فنڈ”قائم کرتے ہوئے وسیع پیمانے پر فنڈ ریزنگ کا فیصلہ کیا ہے۔وڈیو لنک اجلاس احسن اقبال اور رانا ثناء اللہ کی زیر صدارت ہوا، اس میں فیصلہ کیا گیا کہ کورونا فنڈ میں پنجاب سے ہر سینیٹر اور رکن قومی اسمبلی سے فی کس ایک ایک لاکھ روپے، ارکان صوبائی اسمبلی، ضلعی صدور و جنرل سیکریٹریز سے فی کس 25، 25 ہزار روپے لیے جائیں گے۔چین کے شہر ووہان سے ایک اور طیارہ طبی سامان اور آلات لے کر پاکستان پہنچ گیاہے۔چین سے آنے والا یہ پانچواں طیارہ ہے، چین سے6 ٹن وزنی طبی سامان فضائیہ کے طیارے سی ون 30 پر لایا گیا، جس میں 15 وینٹی لیٹرز،تین لاکھ میڈیکل ماسک، 20 ہزار این 95 ماسک موجود سمیت دیگر آلات موجود ہیں۔این ڈی ایم اے کے چیئرمین نے چین کی جانب سے اس مشکل گھڑی میں ساتھ دینے پر شکریہ اد ا کرتے ہوئے کہا کہ میں پاکستانی قوم اور حکومت پاکستان کی جانب سے چین کا شکریہ ادا کرتاہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں