حکومت اسلام کو مسجد محراب اور منبر تک محدود کرنا چاہتی ہے ہم ایسا نہیں ہونے دینگے: امیرالعظیم

گجرات(نمائندہ خصوصی)جماعت اسلامی کے مرکزی جنرل سیکرٹری امیرالعظیم نے کہاہے کہ ہردورمیں بگاڑ ہوتارہاہے پرانے ادوارمیں شرک اوربادشاہت ودیگر بگاڑ تھے آج کے دورکاسب سے بڑا بگاڑ اسلام کومسجد،محراب اورمنبرتک محدود کرناہے انہوں نے کہاکہ افسوس آج حکومت اوراپوزیشن سچ تو بولتے ہیں لیکن دوسروں کے بارے میں سچ بولتے ہیں جس دن حکومت اپوزیشن کے عمائدین نے اسٹیبلشمنٹ نے سچ بولناشروع کیااوراپنے بارے میں سچ بولناشروع کردیاتو یہ سچ انتہائی بابرکت ثابت ہوگا وہ گزشتہ روزاسلامک سنٹرمیں ضلعی امیرجماعت اسلامی ضیاء اللہ شاہ ایڈوکیٹ کی تقریب حلف برداری کے موقع پر خطاب کررہے تھے۔امیرالعظیم نے کہاکہ جماعت اسلامی نے اسلام کو جومحدود کردیاگیاہے اس محدودیت کے خاتمے کے لئے میدان میں ہے ہم دین کو سیاست نہیں بلکہ سیاست کودین کاتابع بناناچاہتے ہیں الحمد للہ جب جماعت اسلامی سیاست میں نہیں تھی تو عوام میں مشہورتھاکہ لچے لفنگے سیاست کرتے ہیں جماعت اسلامی نے سیاست میں آکربتایاکہ سیاست کارانبیاء ہے اگرسیاست دین کے تابع نہیں ہوتی تو چنگیزیت موجود رہے گی آئین قانون بچانے کے لئے اسلامی شناخت کومحفوظ کرنے کے لئے جماعت اسلامی اپناکرداردا کرتی رہے گی ریاست مدینہ کے دعویدار عمران خان قوم کودھوکہ دے رہے ہیں الحمد للہ جماعت اسلامی میں موروثیت نہیں جمہوری اندازمیں انتخاب ہوتاہے دیگرجماعتوں میں تو موروثیت قائم ہے اوربرائے نام انتخاب بھی نہیں ہوتا۔علی بابا کوبھگانے والے چالیس چوروں کوحکومت نے اپنی کابینہ میں بٹھارکھاہے حکومت اوراپوزیشن جمہوریت کوپٹڑی پرڈالناچاہتی ہے تو اپنے اندرجمہوریت لائے ووٹ کوعزت جب ملے گی جب ووٹرکوعزت کی روٹی میسرآئے گی،سابق حکومت نے ممتازقادری کوپھانسی دی موجودہ حکومت نے آسیہ ملعونہ کوباہربھیجا یہ انٹرنیشنل ایجنڈے پرچلتے ہیں اسٹیبشلمنٹ کواب آنکھیں کھولنی چاہیں لٹیروں سے پوچھاجاتا ہے تو وہ جمہوریت کی دہائی دیتے ہیں سب سے پہلے پاکستان کانعرہ لگانے والے مشرف آج پاکستان میں کیو ں نہیں ہیں جرنیلوں سے حساب مانگاجاتاہے تو وہ شہادتوں کی آڑ لیتے ہیں اسٹیبلشمنٹ پاک فوج کوملیا میٹ نہ کرے اپنی ساکھ کی حفاظت کرے پہلے سیاستدان جج اعلیٰ عدلیہ میں لگاتے تھے بعد میں ایک کلیہ بن گیا اسی طرح پاک آرمی کے کورکمانڈرمل بیٹھ کر اجتماعی بصیرت سے فیصلہ کریں سلیکشن،ایکسٹینشن کا مسئلہ ہمیشہ کے لئے ختم کردیں فوج اپنی منجھی تلے ڈانگ پھیرے سیاست میں ایجنسیوں کاعمل دخل ختم کرناہوگا اسٹیبلشمنٹ ریفری بنے،ریفری خلاف ورزی پرکھلاڑی کوجرمانہ کرتاہے خود کھلاڑی بن کر ساتھ نہیں دیتا یہ باتیں گجرات میں اس لیے کررہاہوں کہ یہ پاک فوج کی عظمت کاعلمبردارعلاقہ ہے ہم بغیر لالچ کے ملکی سالمیت کے لئے ہزاروں جانیں قربان کرچکے ہیں پاک فوج کے ہرشہید کے ساتھ جماعت اسلامی کے کارکن نے بھی قربانی دی ہے اورتاریخ گواہ ہے قوم سے بھی اپیل ہے کہ وہ اس تماشے کوختم کریں اوردیانتدارقیادت کو سلیکٹ کریں ہم اقتداراختیاریونین کونسلز سے لیکر قومی اسمبلی مرکزتک حاصل کرناچاہتے ہیں تاکہ اللہ کے دین کے نفاذ کے لئے کام کرسکیں۔ہزاروں اراکین کے ساتھ جماعت اسلامی کانظم وضبط چلتاہے پچھلے دورمیں جب سپیکرایازصادق سے ملنے گئے تو انہوں نے بیچارگی سے مجھے اورسراج الحق سے کہاتھاکہ آپ اپنی جماعت کی مرکز صوبائی اورضلعی قیادت کیسے آسانی سے بدل لیتے ہیں ہمیں تو ایک چھوٹی سی سیٹ کے معاملے پرانتہائی مشکل پیش آتی ہے۔انہوں نے کہاکہ الحمد للہ جماعت اسلامی کادستور اوراس کی ہرشق پرعمل ہوتاہے یہ دستوردیگرجماعتوں کے دستوروں کی طرح خوشنماالفاظ نہیں بلکہ اس کے ہرلفظ پرعمل ہوتاہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں