“میں کیہڑے پاسے جاواں”… ” میں منجھی کتھے ڈاہواں”

میں کیہڑے پاسے جاواں
میں منجھی کتھے ڈاہواں

از : افتخار احمد جرمنی

پاکستان دنیا کی واحد مملکت ہے جہاں بیک وقت کئی حکمران الگ الگ احکامات جاری کر رہے ہیں ہر کوئی اپنے حکم کو حرف آخر قرار دے رہا ہے عوام پریشان ہے کہ کس کی مانے اور کس کی نہ مانے ۔گزشتہ روز حکومت آزاد کشمیر نے اچانک کرونا وائرس میں خطرناک حد تک اضافے کے بعد منگل سے لاک ڈاون میں نرمی کے احکامات کو واپس لیتے ہوئے دوبارہ مکمل لاک ڈاون کر دیا ، سپریم کورٹ کی ہدایات پر اسلام آباد کی۔تمام مارکیٹس اور شاپنگ سینٹر کھل گئے ، خیبر پختون خواہ میں پبلک ٹرانسپورٹ کھولنے کی اجازت دے دی گئی پشاور شہر کے اندر پبلک ٹرانسپورٹ چلنا شروع جبکہ سینی ٹائیزر ، سماجی فاصلہ اور بسوں کو ڈس انفیکٹ کرنے کی تمام حکومتی ہدایات نظر انداز کر دی گئیں ۔ پنجاب حکومت کا شاپنگ مالز چوبیس گھنٹے کھولنے کا اعلان ۔سپریم کورٹ نے سندھ حکومت کے اقدامات کے خلاف فیصلہ دیتے ہوئے کراچی کی تمام مارکیٹس کھولنے کی اجازت دے دی ۔ کراچی کے تاجروں کا آج سے چوبیس گھنٹے کاروبار کھولنے کا اعلان ۔ گوجرانوالہ اردو بازار میں دوکانداروں کا کرونا وائرس سے معاہدہ طے پا گیا بازار جمعہ ہفتہ اور اتوار کو بند رہیں گے جبکہ کرونا وائرس سوموار سے جمعرات تک بازار کا چکرنہیں لگائے گا ۔
سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد کراچی کی سڑکوں پر ٹریفک کا رش بے قابو اور عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی راہنما سابق وفاقی وزیر ریلوے غلام احمد بلور کا کرونا ٹیسٹ مثبت آ گیا .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں