حکومتی شرط، ن لیگ نے فیصلہ مسترد کردیا

اسلام آباد(جے ایم ڈی) پاکستان مسلم لیگ ن نے قائد میاں محمد نواز شریف کے بیرون ملک علاج کی شرط مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ سکیورٹی بانڈ جمع کرانے کا حکومتی فیصلہ منظور نہیں ہے۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے پارٹی کی سینئر قیادت کا اہم اجلاس جمعرات کو طلب کر لیا ہے جس میں اپنی نوعیت کے منفرد حکومتی فیصلے کے بعد کی حکمت عملی پر سینئر قیادت کو اعتماد میں لیا جائے گا۔ اجلاس کے بعد شہباز شریف سہ پہر تین بجے اہم پریس کانفرنس سے خطاب کریں گے۔

مریم اورنگزیب کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کو مشروط کرنے کا حکومتی فیصلہ عمران خان کے متعصبانہ رویے اور سیاسی انتقام پر مبنی ہے۔ ضمانت کے وقت تمام آئینی اور قانونی تقاضے کیے اور ضمانتی مچلکے جمع کرائے جا چکے ہیں۔ نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کو مشروط کرنا ناقابلِ فہم حکومتی فیصلہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عدالت کے اوپر ایک حکومتی عدالت نہیں لگ سکتی۔ ایسے فیصلے کی پاکستان کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔ سکیورٹی بانڈ جمع کرانے کے حوالے سے ن لیگ اپنا واضح موقف پیش کر چکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے علاج میں ہر لمحہ انتہائی قیمتی اور اسے تاخیری حربوں کی نظر کرنا بدترین ظلم اور زیادتی ہے۔ حکومت تاخیری حربوں کے ذریعے نواز شریف کی زندگی اور صحت کے ساتھ خطرناک کھیل کھیل رہی ہے۔ انھیں کچھ ہوا تو اس کی ذمہ دار بے حس اور سنگ دل حکومت ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں