وزیراعظم ہاؤس میں بیٹھے افسران کوئی کام نہیں کر رہے

معروف صحافی خاور گھمن کا کہنا ہے وزیراعظم ہاؤس میں بیٹھے افسران کوئی کام نہیں کر رہے۔دورانِ پروگرام گفتگو کرتے ہوئے خاور گھمن کا کہنا تھا کہ جب عمران خان کی حکومت آئی تو ان سے ایک امید تھی کہ وہ اشرافیہ کے گٹھ جوڑ کو توڑیں گے۔پی ٹی آئی کی حکومت کو ایک سال گزر گیا ہے اب وزیراعظم عمران خان اور ان کے وزراء سے سوالات تو کیے جائیں گے۔
نیب نے پچھلے 20ماہ کے دوران 71ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروائے جو کہ چوری کیے گئے تھے،جو غبن کر کے لوگ کھا چکے تھے۔لیکن سوال تو یہ پیدا ہوتا ہے کہ وزیراعظم ہاؤس میں بیٹھے افسران جن کے پرنسیپل سیکرٹری اعظم خان ہیں وہ کیا کر رہے ہیں؟۔وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری اعظم خان کوئی کام نہیں کر رہے۔

ان کا وزارتوں پر کوئی دھیان نہیں ہے۔وزارتوں سے جو خط وکتابت کی جا رہی اس کی مانٹیرنگ بھی نہیں کر رہے۔

اعظم خان کی نظر بس ایک ہی بات پر ہے کہ موجودہ نیب کے ہاتھ کس طرح باندھنے ہیں۔موجودہ نیب کے پر کیسے کاٹنے ہیں،تاکہ وہ کیسز جو ان کے خلاف یا دیگر وزراء کے خلاف جو تحقیقات ہو رہی ہیں وہ بند کی جائیں۔خاور گھمن نے مزید کہا کہ ہمیں عمران خان پر پورا یقین ہے لیکن سوال تو یہ ہے کہ عمران خان کی اس دیانتداری نے بارہ ماہ کے دوران غریب عوام کے ساتھ کیا کیا۔
ان سوالوں کے جوابات کوئی دینے والا نہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں