گجرات میں چائلڈ پروٹیکشن سنٹر کے قیام کیلئے کوششیں

گجرات (صابر علی صابر)بے سہارا، لاوارث بچوں کیلئے گجرات میں چائلڈ پروٹیکشن سنٹر کے قیام کیلئے حکومت پنجاب سے درخواست کی جائے گی، چائلڈ لیبر کے تدارک کیلئے لیبر ڈیپارٹمنٹ جامع پلان کیساتھ تینوں تحصیلوں میں چیکنگ یقینی بنائے، فیکٹریوں، کارخانوں سمیت تمام کاروباری مراکز میں کم از کم 17500 روپے اور 1295روپے فی ہزار اینٹ اجرت پر عمل درآمد یقینی بنایا جائے، یہ فیصلہ ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر خرم شہزاد کی زیر صدارت ڈسٹرکٹ ویجیلنس کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا جس میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر لیبر محمد عثمان، ڈپٹی ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر شاہد محمود، صدر بھٹہ خشت ایسویسی ایشن چوہدری ریاض احمد، نائب صدر چوہدری محمد فیاض، مزدور راہنما پیرزادہ امتیاز سید، ڈی ایچ او ڈاکٹر ایاز ناصر چوہان،مینجر صنعت زار چوہدری محمد ارشد، سوشل سیکیورٹی، اولڈ ایج بینفٹس اور دیگر محکموں کے افسران نے شرکت کی۔ ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر خرم شہزاد نے کہا کہ ایک ماہ کے دوران ضلع کے مختلف تھانوں میں چائلڈ لیبر کرانیوالے 12افراد کے خلاف مقدمات درج کرائے گئے ہیں،چائلڈ پروٹیکشن سنٹر کے قیام سے چائلڈ لیبر کرنیوالے اور مستحق بچوں کی مستقل دیکھ بھال اور تعلیم و تربیت کیلئے اقدامات کئے جاسکیں گے۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ ماہ جولائی میں کم از کم اجرت ادا نہ کرنے والے 350آجروں کے چالان کئے گئے اور ان پر بھاری جرمانے بھی عائد کئے گئے ہیں تاہم اس حوالے تمام فیکٹر ی مالکان،بھٹہ خشت مالکان، کاروباری حضرات کو اس قانون سے آگاہی بھی فراہم کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ بھٹہ مزدوروں کیلئے محکمہ صحت کیطرف سے مختلف علاقوں میں ہیلتھ کیمپس کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے جس سے ابتک 1814بھٹہ مزدور اور انکی فیملیز کے افراد مستفید ہو چکے ہیں۔ڈپٹی کمشنر نے سوشل سکیورٹی اور اولڈ ایج بینفٹس ڈیپارٹمنٹ کیطرف سے بھٹہ خشت اور دیگر اداروں میں کام کرنیوالے مزدوروں کو کارڈز کے اجراء میں تاخیر پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور واضع کیاکہ دونوں ڈیپارٹمنٹ اس حوالے سے ٹھوس پیشرفت کرکے آئندہ اجلاس میں آگاہ کریں۔ اس سے قبل لیبر ڈیپارٹمنٹ کے افسران نے مزدوروں کی فلاح و بہبود کیلئے اقدامات بارے بریفنگ دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں